بلڈ پریشر سے زندگی بھر کے لیے نجات

بلڈ پریشر سے زندگی بھر کے لیے نجات

بلڈ پریشر کو خاموش قاتل بھی کہا جاتا ہے جو آہستہ آہستہ جسم کو مختلف امراض کا شکار کرکے موت کی جانب لے جاتا ہے خاص طور پر اس کے شکار افراد میں شدید غصہ دماغ کو جانے والی شریان کے پھٹنے کا خطرہ بڑھا دیتا ہے جس سے فالج جیسا مرض لاحق ہوسکتا ہے۔اس مرض کے شکار افراد کے لیے غذا بھی خاص ہوتی ہے خاص طور پر نمک سے گریز کیا جاتا ہے تاہم ایسی خوراک کی کمی نہیں جو منہ کا مزہ بھی برقرار رکھتی ہیں اور بلڈپریشر کو بھی قدرتی طور پر متوازن سطح پر رکھتی ہیں۔ایک سروے کے مطابق تقریبا باون فیصد پاکستانی آبادی ہائی بلڈ پریشر کا شکار ہے۔
اور بیالیس فیصد لوگوں کو معلوم ہی نہیں کہ وہ ہائی بلڈ پریشر کے مرض میں مبتلا ہیں دارچینی بلڈپریشر کو معمول پر لانے میں کرشماتی کردار ادا کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ یہ کولیسٹرول لیول کو بھی کم کرتی ہے۔ اس مصالحے کو غذا کے ساتھ ساتھ میٹھی ڈشز اور مشروبات میں بھی شامل کیا جاسکتا ہے بلکہ اپنے ہر کھانے میں اس کو شامل کرنا آپ کی صحت کے لیے بہت زیادہ مفید ثابت ہوتا ہے مختلف طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ٹماٹر کھانے کی عادت سے بھی ہائی بلڈ پریشر کو کم کیا جاسکتا ہے، جس کی وجہ اس میں موجود فیٹی ایسڈز اور دیگر اجزا ہیں آلوﺅں میں پوٹاشیم کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے اور ہم پہلے ہی بتا چکے ہیں۔
کہ یہ معدنیاتی عنصر بلڈپریشر کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے، مزید یہ کہ آلوﺅں میں نمکیات کی مقدار کم، چربی سے پاک اور فائبر کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے جو اسے کسی بھی وقت کھانے کے لیے مثالی بناتا ہے خاص طور پر انہیں ابال یا پکا کر کھانا زیادہ بہتر ثابت ہوتا ہے مختلف طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ پوٹاشیم سے بھرپور غذا اور نمک کا کم استعمال صحت مند بلڈ پریشر کو برقرار رکھنے میں مدد دیتا ہے۔ کیلا ایسا پھل ہے جو کہ پوٹاشیم سے بھرپور ہوتا ہے اور ہفتے میں تین سے چار کیلوں کو کھانے کی عادت ہائی بلڈ پریشر سے نجات میں مدد دے سکتی ہے۔
بلڈ کولیسٹرول کی سطح میں اضافہ بھی ہائی بلڈ پریشر کا باعث بنتا ہے، تو ویجیٹیبل آئل کی جگہ زیتون کے تیل کا استعمال کولیسٹرول لیول کو چھ سے دس فیصد تک کم کرنے میں مدد دیتا ہے، جس سے بلڈ پریشر کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے سبز پتوں والی سبزیاں جیسے پالک آئرن اور پوٹاشیم سے بھرپور ہوتی ہے، جیسا اوپر ذکر کیا جاچکا ہے کہ پوٹاشیم وہ جز ہے جو کہ بلڈپریشر کی سطح میں کمی لانے میں انتہائی فائدہ مند ہے، ہفتہ بھر میں کچھ مقدار میں پالک کھانا اس خاموش قاتل مرض سے تحفظ دے سکتا ہے باداموں کے فوائد بتانے کی ضرورت نہیں، پروٹین، فائبر اور میگنیشم سے بھرپور یہ گری بلڈ پریشر کی روک تھام میں بھی مددگار ثابت ہوتی ہے۔ غذا میں میگنیشم کی کمی ہائی بلڈ پریشر کا باعث بنتی ہے، روزانہ تھوڑے سے بادام کھانے کی عادت صحت مند سطح پر بلڈ پریشر کو برقرار رکھنے میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *