بالوں کی سفیدی کا علاج

ایک اور تجربے میں سائنسدانون نے چوہے کو ہائی بلڈ پریشر میں دی جانے والی دوا دی۔ ایسا کرنے سے بالوں میں ہونے والی تبدیلی کو روکنے میں کامیابی حاصل ہوئی۔ انہوں نے تکلیف میں مبتلہ چوہوں کا دوسرے چوہوں سے موازنہ کیا اور اس پروٹین کی شناخت کر لی جو سٹیم سیلز کو نقصان پہنچا رہا تھا۔ اس پروٹین کا نام سائکلک ڈیپنڈینٹ کائینیز (سی ڈی کے) ہے۔ جب سی ڈی کے کو روکا گیا تو چوہے کے بالوں کے رنگ میں ہونے والی تبدیلی بھی رک گئی۔ اس تجربے کی مدد سے بالوں کو سفید ہونے سے روکنے کے طریقہ کار کے بارے میں سائنسدانوں کو اہم معلومات حاصل ہوئیں۔ ایک ایسی دوا جو سی ڈی کے پروٹین کے اثر کو روک سکے، بالوں کی سفیدی بھی روک سکتی ہے۔ پروفیسر سو نے بی بی سی کو بتایا کہ ’اس تجربے سے حاصل ہونے والی معلومات کا مطلب یہ نہیں کہ ہم نے انسانوں میں بال سفید ہونے کے عمل کو ختم کرنے یا روکنے کا علاج تلاش کر لیا ہے۔ ہمارا تجربہ چوہوں پر تھا۔ ہماری اس دریافت سے صرف پہلی منزل طے ہوئی اور ابھی بہت طویل سفر باقی ہے جس کے بعد جا کر ہم انسانوں کے لیے بالوں کو سفید ہونے سے روکنے کے لیے کوئی علاج ڈھونڈ سکیں گے‘۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.