سانس کی تنگی،بلغم، ریشہ، کیرا، چھاتی میں جکڑن، پھیپھڑوں کی صفائی کھانسی، نزلہ، زکام، گلے کی خرابی کا فوری اثردار نسخہ،فوراََجانیں

اکثر افراد کو حساسیت (الرجی) کی وجہ سے دم گھٹنے کی شکایت ہو جاتی ہے، مگر کچھ اشخاص کو بعض غذاؤں سے دم گھٹنے کی کیفیت عارض ہوجاتی ہے، مثلاً انڈہ، گھی، آلو، چاول، بھنڈی، اروی، سرد مزاج والے پھل وغیرہ ۔۔ سینے کی جکڑن بہت ہی اہم مسئلہ ہے اس کے بارے میں آپ کو مکمل آ گاہی ہو نی چاہیے

تا کہ ہمیں کل کو کسی بھی قسم کا کوئی بھی مسئلہ نہ ہو۔ جیسا کہ ہم سب ہی اس بات سے بہت ہی اچھے سے واقف ہیں کہ ہر بیماری ہی بری ہے کوئی بھی بیماری صحیح نہیں ہو تی ہر کسی کو ہر قسم کی بیماریوں سے بچنا چاہیے تا کہ ہم ہمیشہ صحت مند رہ سکیں۔کہنے کا میرا مقصد ہے کہ ہمیں ہر قسم کی بیماریوں کے متعلق آگاہی ہو نی چاہیے جیسا کہ یہ سانس کی تکلیف ہے یا سینے کی جکڑن ہے یہ ایک ایسی تکلیف ہے کہ یہ تکلیف ہر کسی کو ہوتی جا رہی ہے ہر کوئی اس تکلیف سے مبتلا ہو تا جا رہا ہے۔ جیسا کہ میں نے پہلے بھی بتا یا کہ ہمیں اس بیماری سے چھٹکارا حاص کر نا ہی ہوگا تو آ ئیے جانتے ہیں کہ ہم اس بیماری سے کیسے چھٹکارا حاصل کر سکتے ہیں۔ سانس لینے میں تنگی ہو تی ہے اور آپ کا سانس پھولتا ہے

تو آج میں آپ کے لیے بہترین ریمیڈی لے کر آ ئی ہوں جس سے آپ کا سانس پھولنا ہمیشہ کے لیے ختم ہو جا ئے گا اور ساتھ ہی ساتھ آپ کے پھیپھڑے بھی مضبوط ہو ں گے اور آپ کے پھیپھڑوں کی صفائی بھی ہو گی۔ باتیں شروع کر نے سے پہلے میری آپ سے درخواست ہے کہ میری ان باتوں کو بہت ہی زیادہ غور سے سنیے گا تا کہ آپ کو بہت سا فائدہ حاصل ہو سکے اگر سانس پھولنے کی وجہ کی بات کی جا ئے تو وجہ ہے مو ٹا پا موٹاپا خود ایک بڑی بیماری ہے اور بہت سے مسائل بھی پیدا کر تا ہے جیسے سانس کا پھول جا نا پیدل چلنے سے بھاگنے سے سیڑھی چڑھنے سے جن کا وزن زیادہ ہو تا ہے یا ایسے لوگ جو کہ بیٹھے رہتے ہیں یا پھر ایسے لوگ جو سگ ریٹ نوشی کرتے ہیں ان کو سانس کی تکلیف ہو تی ہے اور سانس پھولنے لگتا ہے۔

طبیعت جو ہے نڈھال ہو جا تی ہے کیونکہ ایسے لوگوں کے پھیپھڑے یا تو کمزور ہو تے ہیں یا ٹھیک سے کام نہیں کر تے اس لیے اگر کسی کو اس قسم کی تکلیف کا سا منا ہو تو اس کے لیے سب سے بہتر ین علاج یہی ہے کہ اگر سگ ریٹ نوشی کر رہے ہیں تو اس کو تر ک کر دیں موٹاپا ہے تو خود کو سلم کریں اگر کسی کو سانس پھولنے کی تکلیف ہو تی ہے اس کا علاج کشمش سے بڑھ کر کچھ بھی نہیں ہے کشمش کے جہاں بہت فوائد ہیں وہاں یہ ایک انسان کے پھیپھڑوں کے لیے بہت ہی زیادہ فائدہ مند ہے۔
مندرجہ ذیل اقدامات کرنے سے اضافی بلغم اور بلغم کو ختم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔

1. ہوا کو نم رکھنا۔ خشک ہوا ناک اور گلے میں جلن پیدا کرتی ہے ، جس کی وجہ سے زیادہ بلغم چکنا کرنے والا بن جاتا ہے۔ سونے کے کمرے میں ٹھنڈی مسٹ ہیومیڈیفائر رکھنا بہتر نیند کو فروغ دے سکتا ہے ، ناک صاف رکھ سکتا ہے اور گلے کی سوزش کو روک سکتا ہے۔

2. کافی مقدار میں سیال پینا۔ بلغم کو پتلا رکھنے کے لیے جسم کو ہائیڈریٹ رہنے کی ضرورت ہے۔ جب کوئی شخص نزلہ زکام سے بیمار ہوتا ہے تو اضافی سیال پینا بلغم کو پتلا کر سکتا ہے اور سینوس کو نکالنے میں مدد دیتا ہے۔ موسمی الرجی والے لوگ یہ بھی محسوس کر سکتے ہیں کہ ہائیڈریٹ رہنے سے بھیڑ سے بچنے میں مدد ملتی ہے۔

3. چہرے پر گرم ، گیلے واش کلاتھ لگانا۔ یہ تیز ہڈیوں کے سردرد کے لیے سکون بخش علاج ہو سکتا ہے۔ نم کپڑے سے سانس لینا ناک اور گلے میں نمی لوٹنے کا ایک تیز طریقہ ہے۔ گرمی درد اور دباؤ کو دور کرنے میں مدد کرے گی۔

4۔ سر کو بلند رکھنا۔ جب بلغم کی تعمیر خاص طور پر پریشان کن ہوتی ہے تو ، یہ کچھ تکیوں پر یا لیٹنے والی کرسی پر سونے میں مدد مل سکتی ہے۔ فلیٹ لیٹنا تکلیف میں اضافہ کر سکتا ہے ، کیونکہ یہ محسوس کر سکتا ہے کہ گلے کے پچھلے حصے میں بلغم جمع ہو رہا ہے۔

5. کھانسی کو دبانا نہیں۔ کھانسی ، بلغم سے بھری کھانسی کا سامنا کرتے وقت دبانے والوں کو استعمال کرنے کا لالچ ہوسکتا ہے۔ تاہم ، کھانسی جسم کا سراو پھیپھڑوں اور گلے سے باہر رکھنے کا طریقہ ہے۔ کھانسی کے شربت تھوڑے سے استعمال کریں ، اگر بالکل۔

6. احتیاط سے بلغم سے چھٹکارا پانا۔ جب بلغم پھیپھڑوں سے حلق میں اٹھتا ہے تو ، جسم ممکنہ طور پر اسے نکالنے کی کوشش کر رہا ہوتا ہے۔ اسے تھوکنا نگلنے سے بہتر ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.