سردیوں میں گڑ کے ساتھ مونگ پھلی کھانا کے فوائد

مونگ پھلی کو غریبوں کا بادام کہا جاتاہے۔ اپنے بے پناہ فوائد کی وجہ سے ماہرین اسے مکمل خوراک دیتے ہیں۔مونگ پھلی ایک پھلی دار پودا ہے۔ لیکن غذائیت کی وجہ سے اسے خشک میوؤں میں شمار کیا جاتا ہے۔ مونگ پھلی چکنائی سے بھر پور ہوتی ہے۔ اسی وجہ سے اس کاتیل بھی نکالا جاتاہے۔ مونگ پھلی کو مختلف ڈبل روٹی اور بند، کیک ، مٹھائیو ں اور سوپ سمیت کئی دیگر چیزوں میں استعمال کیا جاتاہے۔ مونگ پھلی ہر دلعزیز میوہ ہے۔ کیونکہ چھوٹے اسے پسند کرتے ہیں ۔
سردیوں میں مونگ پھلی کا کھانے کا اپنا ہی مزہ ہوتا ہے۔ اگر آپ چند دانے مونگ پھلی کے کھا لیتے ہیں تو اس کا آپ کو کیا فائد ہ ہوتا ہے۔ اور آپ سردیوں میں مونگ پھلی کو گڑ کے ساتھ کیسے کھا سکتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق مونگ پھلی میں 28 فیصد لحمیات پائے جاتے ہیں۔ کہتے ہیں کہ مونگ پھلی کے دانوں میں وٹامن ای کی مقدار بہت زیادہ ہوتی ہے۔ سو گرا م دانوں میں آٹھ گرام وٹامنز پائے جاتے ہیں ۔ یہ وٹامن ایک طاقت ور اینٹی آکسیڈینٹ کا کام کرتےہیں ۔ منرلنز میں آئرن، پوٹاشیم ، کیلشیم ، میگنیشیم ، زنک اور سلینیم شامل ہے۔ ان سب کی جسمانی اور روزمرہ ضرورت ایک مٹھی مونگ پھلی کے دانے کھانے سے پوری ہوجاتی ہے۔ مونگ پھلی میں شامل فیٹی ایسڈ ایل- ڈی -ایل کو لیسٹرول کو کم کرتے ہیں ۔ اور ایچ-ڈی –ایچ کی مقدار کو بڑھاتے ہیں۔جس نے نتیجے میں دل میں خون کی نالیوں کو امراض سے تحفظ ملتاہے۔ اور فالج کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

اسی طرح مونگ پھلی میں اینٹی آکسیڈ نیٹ کی بھار ی مقدار ملتی ہے۔ خاص طور پر پیلی فیونل کی زیادتی سے موجودگی کے باعث معدے کے اندر کینسر پیدا کرنے والی مرکبات کی ساخت میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے۔ اور یوں معدے کے کینسر کی روک تھا م ہوجاتی ہے۔ اور ساتھ میں دل کے امراض اور ذہنی دباؤ سے بچاؤ ملتا ہے۔ ماہرین کے مطابق موجود اینٹی آکسیڈینٹ دل میں سکڑن اور تنگی پیدا کرنےوالے ہارمونز کے اثرات میں کمی لاتے ہیں۔یوں نالیوں میں تنگی آکر بندش پیدا کرنے والی کی روک تھام ہوجاتی ہے۔ اس طرح بلڈپریشر بلند نہیں ہوتا ہے۔ ایک اورمزے کی بات بتاتے ہیں کہ مونگ پھلی کے دانوں کو ابال لیاجائے تو اس میں اینٹی آکسیڈینٹ کی مقدارمیں اور اضافہ ہوجاتاہے۔ اور ان کے اثرات مزید بڑھ جاتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے۔ کہ مونگ پھلی میں دیگر میوہ جات میں مختلف فائبرز، وٹامنزاور اینٹی آکسیڈینٹ شامل ہوتے ہیں۔
جو کہ کینسر اور دل کی بیماریوں کےخلاف قوت ِ مدافعت رکھتے ہیں۔ سردیوں میں مونگ پھلی کو گڑکے ساتھ کیسے تیار کرنا ہے آ پ نے گڑ کا شیرہ تیا ر کرلیں۔ اس میں مونگ پھلی ملانی ہوتی ہے۔اور اس کو کسی برتن میں ڈال کر چھوڑ دیں۔پھر اس کو خشک ہونے پر ٹکڑوں میں کاٹ لیں۔ یوں یہ لذیذ سی مٹھائی بن جاتی ہے۔ آخرمیں مونگ پھلی سے کیانقصانات ہوسکتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ جسم میں خارش ہونے کی صورت میں مونگ پھلی نہیں کھانی چاہیے۔ اس سے خارش میں مزید اضافہ ہوسکتاہے۔ اسی طرح حاملہ خواتین کے لیے بھی تباہ ہے۔ اسی طرح کھانسی کی صورت میں اس کا استعمال ترک کر دیں۔ کیونکہ یہ چکنائی سے بھرپور میوہ ہے۔ جو کھانسی میں اضافے کا سبب بن سکتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.