”جگر معدے مثانے کی گرمی خارج پیشاب کا پیلا پن جسم میں سوئیاں چبھنا دل گھبرانے کا آسان دیسی علاج“

پاکستان کیا دنیابھر میں جہاں جہاں مرد حضرات رہتے ہیں ان میں سے نوے فیصد کو یہ مسئلہ ہے نہ صرف مردوں کو مسئلہ عورتوں کو بھی یہ مسئلہ عموماً رہتا ہے۔ معدے مثانے اور جگر کی گرمی جس سے ہاتھ اور پاؤں کی تلیاں جلتی ہیں دل گھبراتا ہے اس کے ساتھ ساتھ سر پر کسی نے وزن رکھ دیا

ہو مزاج چرچرا ہوجاتا ہے ۔یہ سب اس وقت ہوتا ہے جب خون میں ایک چیز کی تھوڑی سی زیادتی ہوجاتی ہے طبی زبان اسے ہم سفرا کہتے ہیں جب جگر کی کسی نالی میں رکاوٹ آجائے سفرا سہی طریقے سے ہمار ے جسم میں ضرورت سے زیادہ شامل ہوجائے اور اُس سفرا کی وجہ سے ہمارے جگر میں ہمارے معدے میں مثانے میں پورے دوران خون میں ایک رطوبت کے شامل ہونے کیوجہ سے ہدت بڑھ جاتی ہے اسی کیوجہ سے تھوڑی تھوڑی علامات شروع ہوجاتی ہیں۔جسم میں سے یہ سفرا یہ مادہ ہے اس کو خارج کرنے کیلئے اللہ تعالیٰ نے آپ کو ایسا تحفہ دیا ہے ایسی نعمت دی ہے جولاکھوں کی نہیں چند روپیوں کی آتی ہے ۔ آج جو نسخہ بتائیں گے انتہائی آسان اور صدیوں سے آزمودہ ہے ۔ آپ نے خشک آلو بخارا اور املی لینی ہے جسم میں سے سفرا کو خارج کرنے کیلئے اللہ تعالیٰ نے آلوبخارا سے بڑھ کوئی نعمت نہیں دی ۔ جب سفرا کی مقدار زیادہ ہوجاتی ہے خون میں مثانے میں

گرمی بڑھ جاتی ہے ان سب علامات کو ختم کرنے کیلئے آلو بخارا کا پوری دنیا جوڑ پیدا نہیں کیا ۔تازہ نہ ملے تو خشک حالت میں بھی ملتا ہے یہ پنساری سے خرید لینا ہے اور ساتھ املی لے لینی ہے اس کو استعمال کیسے کرنا ہے آپ نے سات دانے آلوبخارا اور املی کے دس دانے لینے ہیں ۔پھر ایک گلاس پانی میں رات کو بھگو دینا ہے اگر آپ کو کچی مٹی کا برتن ملے اس میں بھگو دیں تو اس کا اثر دس گناہ بڑھ جائیگا۔لیکن آ پ نے شیشے کے برتن میں بھگو دینا ہے آپ نے اسے کسی دھات کے برتن میں نہیں بھگونا بجائے فائدے کے نقصان ہوسکتا ہے ۔ رات کو بھگو دیں صبح اُٹھیں ہاتھ سے اچھی طرح مل کر ان کی گھٹلیاں نکال دیں باقی جو بھی بچا ہے اسے پی لیں ۔ سات دن ایسا کرلیں انشاء اللہ جسم میں ایسے ہوگا کہ ٹھنڈک ہوجائیگی ۔ اس نسخہ کو کم پیسوں کا سمجھ کر نظر انداز نہیں کرنا ہے ۔ اس کو آپ نے استعمال کرنا ہے انشاء اللہ آپ کو بیماری میں آفاقہ ہوگا-

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *