جلے ہوئے زخموں کا علاج صرف دس منٹ میں۔

اگرآپ کا ہاتھ یا بازو یا جسم کا کوئی دوسرا حصہ کچن یا باربی کیو مرکز میں کام کرتے ہوئے جل جاتا ہے یا پھر دھوپ میں زیادہ دیر تک رہنے سے آپ کی جلد ٹماٹر کی طرح سرخ ہوجائے تو ڈاکٹرپامیلا ہوپ کہتی ہیں کہ مندرجہ ذیل تدابیر آپ کو فوری طور پر آرام وسکون پہنچائیں گی۔ ان تدابیر میں کچن میں استعمال ہونے والی اشیاء ہی کام آتی ہیں۔اگرآپ کچن میں حادثاتی طور پر جل جاتے ہیں یا دھوپ میں زیادہ دیر تک رہنے سے آپ کے چہرے کی رنگت بدل جاتی ہے تو اس کے لئے ایلوویرا واقعی کام کرتاہے۔ اسے ایک جادوئی پودا بھی کہاجاسکتاہے۔

ایلوویرا کے ان گنت فوائد ہیں لیکن آج ہم صرف یہ بتائیں گے کہ جلے ہوئے زخم پر یہ کیا اور کیسے کام کرتاہے؟جلے ہوئے مقام پر ٹھنڈا پانی ڈالنے یا برف کا ٹکڑا رکھنے کے بجائے ایلوویرا استعمال کریں جو آپ کو درد میں آرام کے ساتھ ساتھ آپ کی جلد کو دوبارہ ٹھیک ہونے میں بھی مددگار ثابت ہوتا ہے۔ اس سے متاثرہ حصہ کی سوزش میں بھی کمی آتی ہے جبکہ برف سے خون کے بہاؤ میں رکاوٹ پیدا ہوتی ہے جو آپ کے ٹشوز کو متاثر کردیتاہے جس سے آپ کو فائدے کے بجائے نقصان اٹھانا پڑے گااگر آپ کا ہاتھ یا جسم کا کوئی حصہ اچانک کسی گرم چیز کے ساتھ لگ جائے یا آپ غلطی سے کسی گرم چیز کو پکڑ لیں تو آپ پودینہ کا ست والا ٹوتھ پیسٹ کا استعمال کرکے بھی درد کو کم کرسکتے ہیں۔

جلنے کے بعد آپ متاثرہ حصے کو پانی سے صاف کرنے کے بعد اسے ٹشو سے صاف کریں اور پھر اس پر منٹی ٹوتھ پیسٹ کا لیپ کردیں ، اس سے آپ کو فوری طور پر ریلیف ملے گاونیلا کا عرق بھی معمولی جلے ہوئے زخم پر کافی کام کرتا ہے۔کاٹن کی ایک سویب سے آپ ونیلاایکسٹریکٹ کو متاثرہ حصے پر لگالیں۔اس میں موجود الکوحل کی تبخیر زخم کو ٹھنڈک دیتی ہے اور زخم کو ٹھیک کرنے میں بھی مددگار ہوتی ہے۔کالی چائیمیں ٹیننک ایسڈ ہوتاہے جو زخم سے جلن کو خارج کردیتاہے، اس کے نتیجے میں درد کی شدت میں کمی آتی ہے۔ آپ متاثرہ حصہ پر دو یا تین گیلے ہوئے ٹی بیگ رکھ دیں ، انھیں کسی سوتی پٹی کی مدد سے متاثرہ حصے کے اوپر باندھ دیں تاکہ ٹی بیگ وہاں سے ہٹ نہ سکے۔اس طرح آپ اس کا مکمل اور دیرپا فائدہ حاصل کرسکیں گے۔سفید سرکہ میں ایسیٹک ایسڈ ہوتاہے جس میں اسپرین بھی موجود ہوتی ہے۔

جس سے آپ کی درد، خارش اورسوجن میں کافی حد تک کمی آتی ہے۔ اس کے علاوہ سرکہ ایک جراثیم کش اور کھٹا ہے جو آپ کے متاثرہ حصے کو انفیکشن ہونے سے بچاتاہے۔ آپ ٹشو پیپر کو زخم پر رکھ کر اسے سرکہ سے گیلا کرکے استعمال کرسکتے ہیں یا پھرکاٹن سویپ سے بھی لگاکر مطلوبہ نتائج حاصل کئے جاسکتے ہیں شہد کے بے شمار فوائد ہیں۔ ہم اس کو جلے ہوئے زخم پر بھی لگا کر بہت زیادہ فائدہ حاصل کرسکتے ہیں۔ شہد ایک قدرتی جراثیم کش چیز ہے جو نہ صرف ہمارے متاثرہ حصے کو ٹھنڈک کا احساس دیتا ہے بلکہ متاثرہ حصے میں انفیکشن بھی نہیں ہوتا۔اس میں قدرتی طور پر موجود پی ایچ بیلنس جراثیم کو بڑھنے اور پلنے سے روکتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.