ہیرا کو پہننے کے بے شمار فائدے۔

ستاروں کے نیک اثرات میں اضافے اور بد اثرات کو دور کرنے کیلئے ستاروں کی مناسبت سے نگینے بہت فائدہ مند ہوتے ہیں۔

زائچہ میں پڑے سیاروں کی حالت اور طالع کے مطابق ہی مناسب نگ کا چناؤ کرنا چاہیے ورنہ کئی دفعہ غلط نگ پہننے سے فائدہ کے بجائے نقصان کا اندیشہ ہوتا ہے۔قارئین کے لئے صحیح نگ کے جاننے کے لئے کچھ طریقے درج کئے جا رہے ہیں یہ سورج کا نگ ہے اس کو انگریزی میں روبی و ہندی میں مانک فارس یور اردو میں یاقوت یا لعل کہتے ہیں اس کا رنگ تیز سرخ ہوتا ہےپہچان:اصلی یاقوت سرخ رنگت کا چمکیلا اور بھاری پن ہوتا ہے ہتھیلی پر رکھنے سے ہلکی سی گرمی ہونے لگتی ہے شیشے کے برتن میں رکھنے سے چاروں طرف ہلکی سی لال کرنیں دکھائی دیتی ہیں گائے کے دودھ میں رکھا جائے تو دودھ کا رنگ گلابی دکھائی دیگا۔ اگر چاندی کی تھالی میں موتیوں کے ساتھ ایک یاقوت رکھ دیا جائے تو سبھی موتی لال رنگ کے دکھائی دیں گے۔

گرم دوپہر کے وقت روئی میں رکھنے سے روئی میں آگ لگ جائے گی اصلی نگ کی یہی پہچان ہے کہ چمکیلا اور بھاری اور کنیر کے پھولوں جیسا رنگ ہونا چاہیے۔ اس کے نقص کالے اور دودھیا رنگ کی آڑی ترچھیں لکیریں ہوتی ہیں۔ دودھ میں جو رنگ نہ دے۔ جس میں گڑھے پڑے ہوں ایسا نگ کبھی پہننے کےقابل نہیں ہوتا الٹا برااثر دیتا ہے۔پہننے کی ترکیب:اس نگ کو اتوار کے دن سورج کی سماعت میں سونے یا چاندی کی انگوٹھی میں جڑوائیں اور چھوٹی انگلی کے ساتھ والی انگلی میں پہننا چاہیے۔ نگ کا وزن تین‘ پانچ‘ سات‘ نو رتی تک ہونا چاہیے طریقے کے مطابق پہننے سے حکومت وقت میں عزت اورمان میں اضافہ ہوتا ہے۔

جن کو اولاد نہ ہوتی ہو اس کے پہننے سے فائدہ ہوتا ہے۔ دل کی بیماری آنکھوں کی بیماری خون کی بیماری اور جسمانی کمزوریوں میں مفید ہے اس کو برج حمل ‘سرطان ‘اسد‘ میزان‘ عقرب اور قورس والوں کا یاقوت پہننا فائدہ مند ہے یا جن کے زائچہ میں سورج ٹھیک اثر نہ دے رہا ہو تو ان کو بھی یہ نگ پہننا مبارک ہے۔ یہ نگ قمر سے منسوب ہے اس کو ہندی میں مکتا یا چندر منی کہتے ہیں اردو میں موتی۔ انگریزی میں پرل فارسی میں گہر اور عربی میں لولو کہتے ھیں پہچان موتی گول اور سفید چاند کی طرح چمکنے والا خوبصورت اور ہلکے پن والا ہوتا ہے پانی سے بھرے شیشے کے گلاس میں موتی ڈال دیں اگر پانی سے کرنیں نکلتی دکھائی دیں۔

تو سمجھ لینا چاہیے کہ نگینہ بالکل ٹھیک ہے دھان کی بھوسی کو ہتھیلی پر رکھ کر اس پر موتی رکھیں اگر اصلی ہو گا تو اس کی چمک بڑھ جائے گی سچا موتی اگر نہ ملے تو سفید پکھراج پہن سکتے ہیں اصلی موتی پہننے سے دماغ طاقت بڑھ جاتی ہے مرگی بلڈ پریشر‘ پیٹ کی خرابی پتھری دانت کے امراض میں مفید ہے جسمانی خوبصورتی عورت اور دولت کا سکھ ملتا ہے۔ پہننے کی طریقہ:موتی چاندی کی انگوٹھی میں سوموارکے دن قمر کی ساعت میں پہننا چاہیے۔ موتی کا وزن دو ‘چار‘ چھ یا گیارہ رتی کا ہو اور اس کو چھوٹی انگلی میں پہنیں۔ موتی برج حمل‘ ثور‘ جوزا‘ سرطان‘ سنبلہ ‘میزان‘ عقرب اور حوت والوں کو پہننا مبارک ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.