”ماہ رمضان کے آخری روزے رزق کی بارش۔“

السلام علیکم ۔۔۔اسلامک لیڈرکے پیارے دوستو۔۔۔ ماہ رمضان المبارک بڑی برکتوں، سعادتوں اور نعمتوں والا مہینہ ہے۔ اللہ تعالیٰ نے جو برکتیں اور سعادتیں اس مبارک مہینے کے ساتھ خاص فرمائی ہیں وہ کسی اور مہینے کے ساتھ خاص نہیں ہیں۔ جو برکتیں اس مبارک مہینے کے اندر کئے جانے والے نیک اعمال کے ساتھ مخصوص ہیں وہ دوسرے مہینوں میں انہی اعمال کے ساتھ مخصوص نہیں ہیں۔ اس مہینہ کو اللہ تعالیٰ نے روزے اور رات کے قیام کے ساتھ خصوصیت عطا فرمائی ہے یعنی صیام رمضان اور قیام رمضان۔ نفلی روزہ رمضان المبارک کے علاوہ دوسرے مہینوں میں بھی رکھا جاتا ہے اور رات کا قیام، رمضان المبارک کی راتوں کے علاوہ دوسری راتوں میں بھی ہوتا ہے مگر جو فضیلت ماہ رمضان کی راتوں کے قیام میں ہے وہ کسی اور رات کے قیام میں نہیں اور جو فضیلت، برکت اور سعادت ماہ رمضان کے روزوں میں ہے وہ کسی اور مہینے کے روزوں میں نہیں۔ اس لئے کہ ان اعمال کی اس مہینے کے ساتھ ایک خاص نسبت ہے اور اللہ تعالیٰ کو یہ مہینہ بہت عزیز ہے۔ اس لئے اللہ تعالیٰ نے فرمایا کہ ’’رمضان میرا مہینہ ہےدوستواگر کوئی شخص بیمار ہے یا کوئی شخص کسی مشکل میں پھنسا ہوا ہے رزق میں کمی ہے وہ شخص اس عمل کو کرےانشااللہ اس کی تمام رکاوٹیں ختم ہوجائیں گی۔

آپ سےبس درخواست ہے ہماری آج کی اس ویڈیو کو آخر تک ضرور دیکھیے گا تاکہ آپ کی بہتر طور پہ راہنمائی ہوسکےاور اگرآپ اسلامک لیڈر کی ویڈیو پہلی بار دیکھ رہے ہیں اور ابھی تک آپ نے ہمارا چینل سبسکرائب نہیں کیا ہوا تو سب سے پہلے ہمارا چینل ضرور سبسکرائب کر لیجئے اور ساتھ ہی لگے بیل بٹن کو بھی پریس کر لیں تاکہ آپ کو ہماری اپلوڈ ہونے والی مزید معلوماتی ویڈیوز کا نوٹیفکشن ملتا رہے۔ عزیز خواتین وحضرات۔۔۔ جو شخص اس مہینہ میں کسی نیکی کے ساتھ اللہ کا قرب حاصل کرے ایسا ہے ہے جیسا کہ غیر رمضان میں فرض ادا کیا اور جو شخص اس مہینہ میں کسی فرض کو ادا کرے وہ ایسا ہے جیسا غیر رمضان میں ستر فرض ادا کرے ،یہ مہینہ صبر کا ہے اور صبر کا بدلہ جنت ہے اور یہ مہینہ لوگوں کے ساتھ غم خواری کرنے کا ہے ،اس مہینہ میں مومن کا رزق بڑھایا جاتا ہے ،جو شخص کسی روزہ دار کو روزہ افطار کرائے یہ اس کے گناہوں کے معاف ہونے اور آگ سے خلاصی کا سبب ہو گا اور روزہ دار کے ثواب کی مانند اس کو ثواب ہوگا،مگر اس روزہ دار کے ثواب سے کچھ کم نہیں کیا جائے گا صحابہ نے عرض کیا یارسول اللہ ہم میں سے ہر شخص وسعت نہیں رکھتا کہ روزہ دار کو افطار کرائے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ یہ ثواب اللہ تعالیٰ ایک کھجور سے افطار کروانے یا ایک گھونٹ پانی پلانے یا ایک گھونٹ ذائقہ دار دودھ پلانے پر بھی عطا فرما دیتے ہیں ،یہ ایسا مہینہ ہے کہ اس کا اول حصہ اللہ کی رحمت ہے اور درمیانی حصہ مغفرت اور آخری حصہ آگ سے آزادی کا ہے

،جو شخص اس مہینہ میں اپنے ماتحتوں کے بوجھ کو ہلکا کر دے اللہ تعالیٰ اس کی مغفرت فرمادیتے ہیں اور آگ سے آزادی فرماتے ہیں، اور چار چیزوں کی اس میں کثرت رکھا کرو جن میں دو چیزیں اللہ تعالیٰ کی رضا کے واسطے اور دو چیزیں ایسی ہیں جن سے تمہیں چارہ کار نہیں پہلی دو چیزیں جن سے تم اپنے رب کو راضی کرو وہ کلمہ طیبہ اور استغفار کی کثرت ہے اور دوسری دو چیزیں یہ ہیں کہ جنت کی طلب کرو اور آگ سے پناہ مانگو ،جو شخص کسی روزہ دار کو پانی پلائے حق تعالیٰ میرے حوض کوثر سے اس کو ایسا پانی پلائیں گے جس کے بعد جنت میں داخل ہونے تک پیاس نہیں لگے گی۔ اس مہینہ کو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے صبر کا مہینہ قرار دیاہے اور صبر کا بدلہ جنت ہے،قرآن کریم میں اللہ تعالیٰ نے فرمایاہے کہ ہم تمہیں کسی قدر خوف اور بھوک کے ذریعہ آزمائیں گے۔اور آخر میں صبر کرنے والوں کو خوشخبری دے دویہ خوشخبری جنت کی ہے جیسا کہ حدیث سے معلوم ہوتا ہے،اس لیے بندہ روزہ رکھ کر بھوک اور پیاس کی سختی برداشت کر کے اور اپنی نفسانی خواہشوں کو دبا کر محض رضائے الہٰی کے لیے صبرکرتاہے،اگر ہم پورے دن کا جائزہ لیں تو معلوم ہو گا کہ کس طرح بندہ اپنے اللہ کی خاطر تکالیف برداشت کرتا ہے ایک اس کی نیند میں کمی ہو جاتی ہے رات میں صبح سویرے فجر سے پہلے بیدار ہونا اور رات دیر گئے سونا خود ایک مشقت بھرا کام ہے

اور پھر کھانوں کے اوقات تبدیل ہو جاتے ہیں،صبح کا وہ وقت جس میں میٹھی نیند سونا زیادہ پسندیدہ ہوتا ہے اس وقت سحری کھانے کا حکم اور عین مصروفیت کے وقت افطار کا حکم اور پورا دن باوجودتنہا ہونے اور تمام لذیذ کھانوں کے سامنے موجود ہونے کے بھوکے رہنے کا حکم،پھر عبادت میں اضافہ،قرآن کریم کی تلاوت،ذکرو اذکار،تسبیحات و نوافل،تراویح وتہجد کا حکم،اور اعضائے بدن پر پابندی کہ دن میں حالتِ روزہ میں خواہشات پوری نہیں کر سکتے ،زبان ،ہاتھ ،پیر وغیرہ کنٹرول میں رکھنے کا حکم،اور شبِ قدر کی تلاش میں طاق راتوں کو جاگنے کا حکم ،اور عشرہ آخرمیں گھر بار بیوی بچے چھوڑ کر اعتکاف کا حکم یہ تمام احکام محض اپنے مولی کو راضی کرنے کے لیے اور اپنی عاقبت بناینے کے لیے برداشت کئے جاتے ہے، خصوصاً بھوک اللہ سے محبت رکھنے والوں کی خصوصیات میں سے ہیں،اور یہ مجاہدے کے ارکان میں سے ہے ارباب سلوک نے بھوک کی عادت ڈالی ہے، حضرت سہل بن عبد اللہ  فرماتے ہیں کہ جب اللہ تعالیٰ نے دنیا کو پیدا کیا تو پیٹ بھر کر کھانے میں معصیت اور جہالت کو اور بھوک میں علم و حکمت کو رکھ دیادوستوقرآن پاک کی آیت آپ کو بتانے جا رہے ہیں جس کے کرنے سے آپ کی مشکلات حل ہوگی رمضان کے آخری روزے میں صرف ایک سو مرتبہ یہ آیت پڑھنی ہے۔۔

لا الہ اللہ انت سبحانک انی کنت من الظالمین اور پانچ وقت کی نماز پڑھیں انشاءاللہ اللہ رزق میں کشادگی پیدا کریں گے۔ یادرہےیہ چند خصوصیات جو رمضان المبارک کے مہینے کو دوسرے تمام مہینوں سے ممتاز کرتی ہیں اور ان ہی خصوصیات کی بناء پر ماہ رمضان کو اللہ تعالیٰ نے برکتوں اور رحمتوں والا مہینہ قرار دیا ہے ،اس کے علاوہ چند اور خصوصیات بھی ہیں جسے علماء نے احادیث کی روشنی میں بیان کیا ہے :جیسے رزق میں برکت ،دوزخ کی آگ سے خلاصی ،رحمتوں کا نزول ،جنت کوآراستہ کرنا،شیاطین کو قید کرنا ،منہ کی بدبو،مچھلیوں کا دعا کرنا وغیرہ یہ سب خصوصیات ایسی ہیں جو صرف رمضان المبارک کے حصہ میں آئی ہیں حضرت ابو سعید خدریؓ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺ نے فرمایا” جس نے رمضان کار وزہ رکھا ، اور اس کی حدود کو پہچانا، اور جن چیزوں سے پرہیز کرنا چاہئے ان سے پرہیز کیا، تو یہ روزہ اس کے گزشتہ گناہوں کا کفارہ ہو گا’’ یعنی کھانے پینے سے رکنے کے ساتھ ساتھ برے اعمال سے بھی رکا جائے اور منہ کےروزے کے ساتھ دوسرے اعضاء کا روزہ بھی ہونا ضروری ہے۔

الوداع اور عید سے پہلے تمام مسلمانوں کو چاہیے کہ صدقہ و فطر اور اپنی اپنی زکوٰۃ ادا کریں جسکو اللہ تعالیٰ نے مال و دولت عطا کیا یعنی جو صاحب نصاب ہے اپنے مال کی زکوۃ اپنے غریب بھائیوں، اپنے پڑوسیوں، یتیموں، مسکینوں کو اس مال کا مالک بنائیں اور انکی خوشیوں میں شامل رہیں تاکہ وہ بھی عید اور رمضان المبارک کو بہتر طریقے سے اچھی نعمتوں کو کھا کر اور عمدہ لباس پہن کر رمضان اور عید جیسی عبادت کو ادا کرسکیں اللہ تعالی ہم سب کے گناہ معاف فرمائے اور ہماری عبادتوں کو قبول کرے آمین۔ دوستو ہم امید کرتے ہیں آپ کو ہماری آج کی یہ ویڈیو ضرور پسند آئی ہوگی۔ابھی ہی اس ویڈیو کو دوسروں تک شیئر کیجئے گاکیونکہ مخلوق خدا کی بے لوث خدمت کا جذبہ آپکی بگڑی بنا سکتا ہے۔ جلدی کریں نیکی میں دیر نہ کریں شاید آپ کا ایک عمل کسی کی کھوئی ہوئی زندگی واپس لوٹا دے۔اور اگر آپ ہمارے چینل اسلامک لیڈر کو سبسکرائیب کر چکے ہیں تو اپنی رائے سے ہمیں کمنٹس کے ذریعے ضرور آگاہ کیجئے گا۔کمنٹس میں آپ ہم تک اپنے سوالات بھی پہنچا سکتے ہیں۔ہمارے چینل کو اسی طرح دیکھتے رہیے۔۔۔۔ ہم پھر حاضر ہونگے ایک نئے ٹا پک کے ساتھ۔اپنا بہت سا خیال رکہیے گا، السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.