صبح سورج نکلتے ہی ایک تسبیح کر لیں

آج جو تسبیح آپ کی خدمت میں  لے کر حاضر ہوئی ہوں وہ ایک ایسی تسبیح ہےجس کو آپ کر یں گے تو اللہ کے حکم سے جس کو  آپ صبح صادق ہوتے ہی صبح سورج طلوع ہو تے ہی کر لیں گے تو اللہ تعالیٰ آپ  کے لیے رزق کے دروازے کھول دیں گے ۔ جب آپ اس تسبیح کو کر لیں گے حضور پاک ﷺ نے فر ما یا  جو بھی عمل یہ کر ے گا  تو انشاء اللہ اللہ کے حکم سے دنیا ضلیل ہو کر اس کے پاس آئے گی  اللہ اس کے لیے رزق  کے انبار لگا دیں گے اتنا رزق عطا  فرما ئیں گے کہ گھر میں رزق رکھنے کی جگہ تک نہ ملے گی اللہ تعالیٰ اپنے بندے اپنے اس بندے کو اتنا رزق عطا فر ما ئیں گے کہ جتنا وہ چا ہتا ہے۔

بلکہ یہاں ایک اور  بات کہنا چاہوں  گی کہ جتنی بھی مرضی ہو گی انسان  کی جتنی بھی چاہت ہو گی انسان کی اللہ اس کی چاہت سے ڈبل اس کو عطا کر یں گے  اتنا رزق عطا فر ما ئیں گے نبی  کریم ﷺ کا بتا یا ہوا عمل ہے شک کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔ تو اس وظیفے کو سنیے گا غور سے انشاءا للہ مکمل فائدہ حاصل ہو گا اور جو اس وظیفے کو یقین کے ساتھ کر یں گے انشاء اللہ ان کو تمام تر چیزیں عطا کی جائیں گی کہ جس کا اس وظیفے میں وعدہ کیا گیا ہے۔ ایسا وظیفہ میں آپکو بتاؤں گی کہ ایسے لوگوں کے لیے کہ جن سے لوگوں نے منہ پھیر لیے ہوں جو چاہتے ہوں کہ اللہ تعالیٰ ان پر رزق کے انبار لگا دیں گے تو وہ ایک تسبیح پڑھ لیں۔

انشاء اللہ ان کے آگے دنیا کو ڈھیر کر دیں گے مسخر کر دیں گے انبار لگا دیں گے اتنا رزق عطا فر ما ئیں گے  کہ گھر میں رکھنے کی جگہ نہیں ملے گی وظیفے کا آغاز کر تے ہیں  ایک حدیث  سے کہ ایک روز ایک آدمی بارگاہِ عالیہ نبی کریم ﷺ میں حاضر ہوا اور عرض کیا۔  دنیا  نے میری طرف سے پیٹھ پھیر لی ہے اور منہ بھی پھیر لیا سرورِ کائنات حضور پاک ﷺ نے اس آدمی کو کہا ملائکہ کی جو نماز اور اللہ کی مخلوق  کی جو تسبیح ہے اس سے تو کیوں غافل ہو گیا۔  یعنی اللہ کی جو تمام مخلوق تسبیح کر تی ہے جو ملائکہ تسبیح کرتے ہیں۔

تو اس سے کیوں کر غافل ہے اسی کے صدقے سے تو سب کو رزق دیا جاتا ہے جب صبح صادق طلوع ہو جائے تو یہ تسبیح ایک سو بار پڑھ لیا کرو۔ وہ کون سی تسبیح ہے۔ “سبحان اللہ  وبحمدہ سبحان اللہ  العظیم استغفرا للہ سرورِ دو عالم ﷺ نے فر ما یا دنیا تیرے پاس ذیل ہو کر آئے گی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.