یہ 3وظائف ضرور کریں مفلسی ،غریبی،محتاجی تنگدستی ہمیشہ کیلئے ختم

دنیا دار او ر راہ حق کے مسافر میں فرق جاننا ہو تو کا انتظار کیا کریں ۔عباد الرحمٰن یعنی اللہ کے بندے ۔رمضان المبارک کے انتظار میں گھڑیاں گنتے ہیں جب دنیادار کی نظر عید الفطر پر ہوتی ہے ۔ ثواب تو دونوں کو ملے گا اور مدارس کے لحاظ سے دونوں مختلف ہیں۔ روزہ اپنی فضیلت کے حساب سے اپنی فرضیت کے دن سے لیکر آج کے دن تک اُمت کی مرغوب ترین عبادت رہی ۔جو لوگ اذکار وتسبیحات کرتے ہیں۔ وہ اس ماہ کے دوران یہ چار وظائف بھی ساتھ کرلیں۔ یہ انتہائی مختصر اور جامع وظائف جو انسان کو رزق وصحت کی بحالی دعا کی قبولیت اور گناہوں سے بچانے میں مدد فراہم کرتی ہے ۔

ماہ رمضان آپکا اگر اذکار وتسبیحات کا سلسلہ جاری رہتا ہے تو اس ماہ کے دوران یہ چار وظائف ضرور کریں یہ انتہائی مختصر اور جامع وظائف ہیں جو انسان کو رزق اور صحت کی بحالی دعا کی قبولیت اور گناہوں سے بچانے میں مدد گار ثابت ہوتے ہیں۔ روزی میں وسعت کیلئے نماز فجر کے بعد اول وآخر درود ابراہیمی اور اللہ تعالیٰ کے اس اسم مبارک سے یا باسطُ گیارہ سو مرتبہ پڑھیں اور پھر ہر جائز دعا کی قبولیت کیلئے نماز ظہر کے بعد اول وآخر درود ابراہیمی اور اکتالیس مرتبہ یا سامعُ یا مجیبُ پڑھیں اور رمضان کا خاص خیال رکھیں اللہ تعالیٰ کا یہ مہینہ بڑی برکت والا گیارہ ماہ چھوڑ دیے ہیں جن میں تم کھاتے ہو پیتے ہر قسم کی لذت حاصل کرتے ہو اس نے اپنے لیے ایک مہینہ خاص چن لیا وہ ہے کا مہینہ تمام مہینوں کا سردار بھی کہا جاتا ہے ۔

یہ بے شمار برکات کا مہینہ ہے چودہ برس سے لاکھوں کروڑوں ان برکات کا مشاہدہ کرتے آئے ہیں آج بھی ان برکات سے بہر اندو ز ہونےوالے بزرگ وبرتر موجود ہیں ان ایام میں مخلص روزہ داروں کو خاص روحانی کیفیت سے نوازا جاتا ہے ۔ انکی دعائیں سنی جاتی ہیں۔ ان پر انوار واکرام کے دروازے کھول دیے جاتے ہیں۔اس پر اللہ تعالیٰ کی رحمتوں کا نزول ہوتا ہے ۔ ان تمام فضیلتوں کو دیکھتے ہوئے مسلمانوں کو اس مہینے میں عبادت کا خاص خیال رکھنا چاہیے ۔ کوئی لمحہ بےکار نہ جانے دیا جائے ۔ انسان اس عبادت کیساتھ اپنی تمام ضروریات زندگی کو بھی جاری وساری رکھ سکتا ہے ۔ اسی خاص طریقے سے عباد ت میں بھی مشغول ہوسکتا ہے ۔ اس خاص طرح کی عبادت کو روزہ کہا جاتا ہے ۔روزہ ایک عجیب عبادت ہے کہ انسان روزہ رکھ اپنے ہر کام کو سرانجام دے سکتا ہے ۔ اور پھر بڑی بات یہ ہے کہ ا ن کاموں میں مشغول ہونے کے وقت بھی روزہ کی عبادت روزہ دار سے بے تکلف خود بخود صادر ہوتی رہتی ہے ۔ اسکو عبادت میں مشغولی کا ثواب ملتا رہتا ہے ۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.